, ,

آج انجمن سرفروشان ِاسلام لوگوں کے دلوںاور سینوں کے اندرعشق الٰہی اور عشق مصطفی ﷺ پیدا کررہی ہے۔محمدافضال قادری

﴾ماہانہ محفل گیارھویں شریف بیادسالانہ برسی قبلہ ابا جی حضورؒ،وصی محمد قریشی ؒشہید﴿
جب کبھی ضمیر کے سودے کی بات ہوتو ڈٹ جاﺅ حسین ؑ کے انکار کی طرح
یہ مقدس گھر تو وہ گھر ہے کہ جہاں پر ملائکہ بھی اجازت لے کر حاضر ہو تے ہیں۔ایک دفعہ امام عالی مقام ؑ قرآن کے اوپر کھڑے ہوجاتے ہیں تو صحابہ ؓ نے عرض کی یارسول اللہ ﷺ حسین ّ قرآن کے اوپر کھڑے ہوگئے تو نبی رحمت ﷺنے فرمایا ”قرآن کے اوپر اگر قرآن کو رکھ دیا جائے تو قرآن کی بے ادبی نہیں ہوتی“۔ یہ خاموش قرآن ہے اور یہ بولتا قرآن ہے ۔میرے آقاﷺامام حسین ؑ کے گلے پہ پیار کیاکرتے تھے، چوما کرتے تھے، بوسے دیتے تھے۔ حضرت بی بی فاطمةالزہراہ سلام اللہ علیہاعرض کرتی ہیں کہ یارسول اللہ ﷺ لوگ تو اپنے بچوں کے رخساروں پر پیار کرتے ہیں،ماتھے کو چومتے ہیں، تو فرمایا کہ فاطمہ سلام اللہ علیہا اسی گلے کوکاٹاجائے گا،اسی گلے پر خنجر چلائے جائیں گے ۔ باوجود اس کے کہ وہ کلمہ بھی پڑھتے تھے ،نمازیں بھی پڑھتے تھے ،روزے بھی رکھتے تھے الغرض سارے کام کرتے تھے ۔اس کے باوجود انہوں نے نواسہ رسول ؓ ﷺ کو شہید کیا۔ایک طرف 72نفوس قدسیہ اور دوسری طرف 22ہزار کے قریب لشکر تھا۔ان ظالموں نے جس ظلم و بربریت کا مظاہرہ کیا تاریخ شاہد ہے اور ان واقعات سے آپ سب بخوبی واقف ہیں لیکن بار بار تذکرہ کرنے کا ایک خاص مقصدہے کہ آپ کوایک اہم نقطہ کی طرف لے کر جانا ہے کہ جو شبیری تھے اُن کی زبان بھی کلمہ پڑھتی تھی اور دل بھی کلمہ پڑھتے تھے اور جو یزیدی تھے اُن کی صرف زبان کلمہ پڑھتی تھی ،اُن کادل ،اُن کا باطن ،اُنکا اندرغافل تھا،کلمے کے نور سے خالی تھا۔آج انجمن سرفروشان ِاسلام لوگوں کے دلوں کے اندر اور لوگوں کے سینوں کے اندرعشق ِالٰہی اور عشق مصطفی ﷺ پیدا کررہی ہے کہ اُن لوگوں کے دلوں کے اندر اللہ کانام پیدا ہوجائے ۔جب آپ کے دلوں کے اندر اللہ کانام آجائے گا،آپ کے اندر اللہ کا نور آجائے گاتو آپ یقین کریں اُس وقت آپ ایک چیونٹی کو مارنے سے بھی احتراز کریں گے ۔آپ بچیں گے کہ کوئی بھی اللہ کی مخلوق مجھ سے بیزار نہ ہو ۔اللہ کی کسی بھی مخلوق کو مجھ سے کوئی تکلیف نہ پہنچے ۔آپ کا یہ عالم ہو جائے گا۔ حضرات محترم وہ نور کیسے پیداہوتا ہے یہ دل نور بنانے کی مشین ہے ۔اگر آپ اپنے دل کواللہ اللہ میں لگا لیں گے تو یقین کریں آپ کے اندر نور پیدا ہونا شروع ہو جائے گا۔ بابا بلھے شاہ ؒ فرماتے ہیں کہ
تسبیح کرنا سویو جانے جیہڑاتسبیح کر دا بلھے شاہ ؒدے دل دا منکا اللہ اللہ کردا
ان خیالات کا اظہار محمد افضال قادری نے کیا۔ اُن کا مزید کہنا تھاکہ ہتھ کار وَل تے دل یار وَل ۔آنکھیں دیکھنے کےلئے ،زبان بولنے کےلئے ،ہاتھ پکڑنے کےلئے ،پاﺅں چلنے کےلئے الغرض 18ہزار مخلوقات اللہ تبارک وتعالیٰ نے بنائی ہیں ۔چھ ہزار خشکی میں ،چھ ہزار پانی میں اور چھ ہزار ہوائی اور فضائی ،تمام مخلوقات کا انسان کو سردار بنا کر تمام فرشتوں سے سجدہ کروا کر اُس انسان کو دنیا میں بھیج دیااور جب انسان گارے اورمٹی کے درمیان تھا تو فرشتے کہنے لگے کہ مولا اس کو کیوں بنا رہاہے؟ یہ دنیا میں جاکر دنگا فساد کریں گے لیکن اللہ نے فرمایا کہ جومیں جانتا ہوں وہ تم نہیں جانتے ۔ کوئی تو بات تھی انسان کے اند رجو صرف اللہ جانتا تھاوہ یہی بات ہے کہ بندے کا یہ جو دل ہے یہ جب ایک مرتبہ دھڑکتا ہے توساڑھے تین کروڑ مرتبہ اُس کو اللہ کا ذکر کرنے کا اجر مل جاتاہے ۔اربوں ،کھربوں جرثومے ہیں ،وائٹ سیل ،ریڈ سیل،جب یہ دل اللہ اللہ کرتا ہے تو وہ بھی اللہ کانام لیتے ہیں توپھر یقین کریں فرشتے بھی حیران رہ جاتے ہیں ۔اس بندے کی عبادت اس قدر پرواز کرتی ہے کہ یہ اللہ کے عرش کو ہلا کر رکھ دیتی ہے تو اللہ کے مقدس فرشتے عرض کرتے ہیں کہ مولا !کیاہوا آج تیرے عرش نے ہلنا شروع کردیا تو اللہ کو اپنے بندے پر فخر ہو تا ہے اور اللہ فرماتا ہے کہ فرشتو یاد کرو وہ وقت کہ جب تم نے انکار سجدہ کیا تھا ،آج میرا وہ بندہ سو رہاہے لیکن اُس کا دل اللہ اللہ کر رہاہے اس وجہ سے میرا یہ عرش جنبش میں ہے ۔اس کے بعد نئے ساتھیوں کو اجازت ذکر قلب مستقل ممبر سپریم کونسل جناب حاجی محمد اویس قادری نے دی۔ نقیب محفل جناب محمد افضال قادری نے لوگوں کو ذکر کا طریقہ بتایا۔
نقیب محفل جناب محمد افضال قادری نے سرکار شاہ صاحب کی ذاکرین پر کرم نوازیوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ سرکار شاہ صاحب نے ہمیں مرید نہیں پیر بنایا ہے لیکن اس کا دارومدار ہماری مرشد پاک کی تعلیمات پر عمل سے مشروط ہے کیونکہ جو اپنے روحانی اکابرین کے بتائے ہوئے سیدھے راستے پر گامزن رہتے ہیں اُن پر خصو صی رحم و کرم کے معاملات ہوتے ہیں ۔یوں تو سرکار شاہ صاحب کی بے شمار کرامات ہیں لیکن حال ہی میں دس محرم کو فیصل آباد کے سینئر ساتھی جناب محمد صدیق صداقت کو فالج ہوگیا تو اُن کے بھائی و دیگرسرفروش ساتھی اُن کو در ِمرشد پاک المرکز روحانی کوٹری شریف ،حیدرآبادپرروحانی فیض کے حصول کےلئے لے گئے تو قبلہ مرشد پاک حضرت سیدنا ریاض احمد گوھر شاھی مدظلہ العالی کی خصوصی نظر کرم کے طفیل وہ اپنے پاﺅں پر چل کر صحت یاب ہو کر واپس آئے جس پر انہوں نے رب تعالیٰ کا شکر ادا کیا۔
اس خصوصی موقع پر والد گرامی قدر مرشد برحق حضرت سیدنا ریاض احمد گوھر شاھی مدظلہ العالی عزت مآب جناب حضرت فضل حسین گوھر شاھی (قبلہ اباجی حضور)،محمد عارف میمن ؒ،شہید وصی محمد قریشیؒ(تاریخ شہادت 19محرم الحرام 2011بروز جمعرات صبح سات بجے )اورشہدائے دادن شاہ ؒسمیت دیگر شہداءکوخراج عقیدت و محبت پیش کیاگیاکہ جنہوں نے اس مشن عظیم کےلئے اپنی زندگیوں کو وقف کر رکھا تھا۔ اللہ پاک اُن کے درجات میں مزید بلندیاں عطاءفرمائے اورہمیں بھی اُن کی طرح اس مشن برحق میں بے لوث ہو کر خدمت کی توفیق عطاءفرمائے ،آمین۔
محفل پاک کاباقائدہ آغاز مغرب کی نماز کی باجماعت ادائیگی کے بعد کیا گیا ۔مناجات کے بعد خصوصی دعا جناب ماسٹر لیاقت علی قادری نے کروائی ۔اس روحانی و وجدانی محفل پاک میں حمد و نعت ،منقبت غوثیہ ؓ،منقبت امام عالی مقام اور قصیدہ مرشد پاک کی سعادت جناب محمد عثمان(کالاپہاڑ)محمد عثمان (بلوچوالا) ،محمد احتشام گوھر، محمد نعمان، میاں عبدالمنان قادری ،ابرارگوھر(جھنگ)،محمد فیصل (جھنگ)و دیگر نے حاصل کی ۔۔جناب عبدالرزاق قادری (سمندری)نے حلقہ ذکر ترتیب دیا ۔مستقل ممبرسپریم کونسل جناب حاجی محمد اویس قادری نے اختتامی دعا کروائی ۔شہدائے کربلا ،شہدائے دادن شاہ ؒ،شہدائے انجمن ،شہدائے پاک فوج اور دیگر امت مرحومہ کی بلندی درجات کے لئے خصوصی دعائیں کی گئیں۔اللہ تعالیٰ وہ وقت جلد لائے جب دنیا کے فیصلے پاکستان کی ہا ں اور ناں میں ہوں ،آمین۔اختتام محفل پر لنگر غوثیہ سے تمام شرکاءمحفل کی تواضع کی گئی ۔

All rights reserved 2018 Copyright - Anjuman Safroshan e Islam